الاماں الحذر

(پروفیسر ڈاکٹر اصغر علی بلوچ)

کوچہ و بازار کے چہرے پہ چھائی مردنی
دے رہی ہے اس بلائے نا گہانی کا پتہ
اک ہجومِ خوف و دہشت چار سو پھیلا ہوا
اختلاط آدمی ہی آدمی کی موت ہے
قرب تنہائی میں رہنے ہی میں اب ہے عافیت
ہر کوئی اب ہر کسی سے بے طرح سہما ہوا
اک طرف ہو کے چھپے رہنے
میں اب ہے زندگی
چارہ گر چارہ گری میں محو ہیں
احتیاط و عزم و ہمت ہی
میں ہے رد بلا
رحم اے رب عطا
مشرق و مغرب کے مالک الحذر
الاماں اے خالقِ کون و مکاں

Comments are closed.