لاک ڈاٶن

(امین اوڈیراٸی)

اک وبا نے زمیں کو گھیرلیا
زندگی کرب میں سمٹ سی گٸی
جو جہاں تھا وہیں پہ جم گیا تھا
جس کو دیکھا وہی تھا سہما ہوا
بات اک فرد کی نہیں تھی وہ
بات دنیا کے تھی بچاٶ کی
سو وبا سے نپٹنے کا یارو!
بس یہی ایک راستہ تھا کہ سب
شہروں, قصبوں کہ ان دیہاتوں میں
بچے, بوڑھے, جوان, مرد و زن
کچھ دنوں کےلیےگھروں میں رہیں
میں تواک شہر کا ہوں باسی جہاں
میں نےدیکھے ہیں بےگھری کے ستم
سو زمانے کی گردشوں میں امین
اعلی حکام کی طرف سے یہاں
گھر میں رہنے کاحکم ملتے ہی
کتنے فٹ پاتھ پر پڑے ہوۓ لوگ
سوچتا ہوں کدھر گٸے ہوں گے۔۔۔!!

Comments are closed.