کرونا کی وبا سے دوستو ڈرنا ھی بہتر ھے

(ڈاکٹر ظفر حسین تسکین)

کرونا کی وبا سے دوستو ڈرنا ھی بہتر ھے
عذابوں کی جفا سے دوستو ڈرنا ھی بہتر ھے

یہ ھر دھرتی پہ اپنے بال کھولے ایک ناگن ھے
تو ایسی بے حیا سے دوستو ڈرنا ھی بہتر ھے

بڑی سفاک و ظالم ھے بہت غم دینے والی ھے سزاؤں کی سزاسے دوستو ڈرنا ھی بہتر ھے

اسے خوف خدا ھر گز نہیں دیکھا ھے دنیا نے
تو ایسی بے وفا سے دوستو ڈرنا ھی بہتر ھے

یہ پھل اور پھول کھانے کی بڑی وحشت سے عادی ھے
سو ایسی بے ریاسے دوستو ڈرنا ھی بہتر ھے

یہ سانسوں پر مصیبت کی طرح سے راج کرتی ھے
عجب سی اس ہوا سے دوستو ڈرنا ھی بہتر ھے

کرونا کی وبا آواز لگتی ھے اجاڑ وں کی
خدار ا اس صدا سے دوستو ڈرنا ھی بہتر ھے

یہ دنیا کو ختم کرنے چلی ھے اپنے غاروں سے
تو اس ظالم وبا سے دوستو ڈرنا ھی بہتر ھے

نہ جانے کس نے اس کے منہ لگایا خون انساں کا
تو اب اس بد غذا سے دوستو ڈرنا ھی بہتر ھے

ظفر پیغام یہ شعری طرح سے اک فریضہ تھا
کرونا کی وبا سے دوستو ڈرنا ھی بہتر ھے

Comments are closed.