گرچہ سورج ہواڈرتے ڈرتے طلوع ،تم تو گھر پر رکو

(خرم خرام صدیقی)

Stay Home ( Khurram Kharam Siddiqui)

Though the sun unwillingly rises, stay home
Birds sing in melodious voices, stay home

Away from the material din and rough clamor
Far away from the corporate noises, stay home

Delve deep into your heart for the intuition
Your soul is full of surprises, stay home

My heart yearns for unison with beloved
However the mind advises, stay home

Doctors, nurses, paramedical staff and forces
All deserve your tribute and prizes, stay home

What goes round, comes round they say
Don’t remove the poet from offices, stay home

Politicians, capitalists, judges and ministers
Wear mask and change your guises, stay home

…………………………………………………
اردو ترجمہ انگریزی غزل ( Stay Home)
گرچہ سورج ہواڈرتے ڈرتے طلوع ،تم تو گھر پر رکو
اورپرندے ہوئے نغمہ زن چار سو، تم توگھر پر رکو
مادیت کے بے معنیٰ اور بے ہودہ شور سے دور
کارپوریٹ غوغا سے بچو، تم تو گھر پر رہو
حصولِ وجداں ہے ایک باطنی تجربہ
تری روح ہے راز کی جستجو، تم تو گھر پر رکو
اگرچہ دلِ غمزدہ کو حسرت رخِ یار کی
عقل کرتی ہے پر گومگو، تم توگھر پر رکو
ڈاکٹر، فوج نرسیں اور پیرامیڈیکل عملہ
لائقِ تحسیں ہے رروبرو، تم تو گھر پر رکو
جو بھی بوتاہے انساں وہی پائے گا آخرش
شاعر وں کو نہ دفتر سے باہر کرو، تم توگھر پر رکو
اہلِ ارباب و اہلِ سیاست، وزیروں ججوں
ماسک پہنو ، بھیس بدلوذرا، تم تو گھر پر رکو

Comments are closed.