چل، آج مان میرا کہا تیرا شکریہ

(آصف خان)

ایک شعر

رفیقو! پیشتر اس سے کہ پچھتانا پڑے سب کو
تو کیوں نہ احتیاطً ہم ذرا سا دور ہو جائیں
—————-
غزل

چل، آج مان میرا کہا تیرا شکریہ
آ، منتظر ہے کب سے خدا تیرا شکریہ

تیرے سبب ہی خود کو مُیسَّر ہُوا ہوں میں
اے آسماں سے آئی وَبا! تیرا شکریہ

ناکامیوں نے چھوڑ دِیے راستے مِرے
ماں کی زُباں سے نِکلی دُعا! تیرا شکریہ

تو اِمتحاں کے وقت مِرے ساتھ ساتھ تھی
اے میری سر بُلند اَنا! تیرا شکریہ

آصف یہ تیرا عِجزِ بیاں اُن کی شان میں
در اصل ہے کمالِ ادا! تیرا شکریہ

Comments are closed.