کورونا کے دنوں میں

(قیوم واثق)

غزل
۔۔۔۔۔۔

نصائح پند ہیں عہد, وبا میں
گھروں میں بند ہیں عہد, وبا میں
۔۔۔۔۔۔
ذرائع آمدن ہیں بند ، ہر سو
ضرورت مند ہیں عہد, وبا میں
۔۔۔۔۔۔
مشاکل جن کو آساں کرلیا تھا
وہ اب دوچند ہیں عہد, وبا میں
۔۔۔۔۔۔
فراق و وصل ہو یا ترکِ الفت
سبھی پابند ہیں عہد, وبا میں
۔۔۔۔۔۔
یہ آفت آئی یا لائی گئی ہے
دلیلیں چند ہیں عہد, وبا میں
۔۔۔۔۔۔
منافق ہے وہی مسند وہی ہے
ارادتمند ہیں عہد, وبا میں
۔۔۔۔۔
اٹھے جو بھی ہیں اس آفت میں واثق
وہی خورسند ہیں عہد, وبا میں

Comments are closed.