یارب ترے جہان میں ایسا کبھی ہوا نہیں

(ڈاکٹر ایوب ندیم)

یارب! ترے جہان میں ایسا کبھی ہوا نہیں

چہرے بھی ہیں چھپے ہوئے،دربھی کوئی کُھلا نہیں

ٹھہرے ہوئے ہیں قافلے ،سنساں پڑے ہیں راستے

غم کی شب سیاہ میں روشن کوئی دِیا نہیں

شاخیں بھی زرد ہوگئیں، پتے بھی سارے جھڑ گئے

سہمے ہوئے طیور ہیں اُڑنے کا حوصلہ نہیں

آندھی کا زور ہے ابھی، اک تہ جمی ہے گرد کی

ہوگی زمین صاف جب، دیکھیں گے کیا ہے،کیا نہیں

جنت نہ تھی مرے لیے،اب تو نہیں زمین بھی

جاوں کہاں مرے خدا،کوئی ترے سوا نہیں

Comments are closed.