کروائی تلخیوں میں رب کائنات کے حضور دعا

(ڈاکٹر عزیز فیصل)

۔۔۔۔۔۔۔
لمحات سخت ٹال, مرے رب ذوالجلال
اس خوف سے نکال، مرے رب ذوالجلال
۔۔۔۔
ابتر ہے، دلخراش ہے، ناگفتہ بہ ہے، اب
انسانیت کا حال، مرے رب ذوالجلال
۔۔۔۔۔
خود کو خدا صفات جو کہتا تھا برملا
وہ بھی ہے اب نڈھال، مرے رب ذوالجلال
۔۔۔۔۔
تو جانتا ہے خوب، فقط تو ہی مالکا!!
کیا ہیں مرے ملال، مرے رب ذوالجلال
۔۔۔۔
رستے ہیں بے نشان، پریشاں ہیں شہر شہر
کر رونقیں بحال، مرے رب ذوالجلال
۔۔۔۔۔
ہر مبتلائے رنج کے چہرے پہ سکھ بکھیر
تجھ پر ہے کیا محال، مرے رب ذوالجلال
۔۔۔۔
میری مدد کے جملہ وسائل ہوئے ہیں ختم
تو ہی مجھے سنبھال، مرے رب ذوالجلال
۔۔۔۔

Comments are closed.