ڈھلنے لگی ہے شام چلو شاعری کریں

(ماجد حسن)

ڈھلنے لگی ہے شام چلو شاعری کریں
سارا ہے انتظام چلو شاعری کریں

گھر میں تو بوریت ہے بڑی کچھ نیا کریں
چھوڑو یہ کام وام چلو شاعری کریں

اک ہاتھ میں گلاب ہے اک ہاتھ میں ہے جام
لے کر خدا کا نام چلو شاعری کریں

دہلیز و در خموش ہیں راہیں اداس ہیں
بہتر یہی ہے کام چلو شاعری کریں

یہ پھول پیڑ نیل گگن سب دھلے سے ہیں
دیتے ہیں یہ پیام چلو شاعری کریں

ماجد حسن بیان سے باہر ہے ماجرا
قصہ ہوا تمام چلو شاعری کریں

Comments are closed.