لمحہ ِ توبہ معافی تو مانگو

(زیب النساء زیبی)

لمحہ ِ توبہ۔۔۔۔۔ معافی تو مانگو..
۔۔۔……………..
تصنع بناوٹ سے خود کو نکا لو۔۔۔
خلوص و محبت کے دیئے جلا لو۔۔۔۔
بے مقصد باتوں سے باز آو۔۔۔۔
بصیرت کی خوشبو ہر سو پھیلاو۔۔۔
یہ غصہ، یہ جھگڑا ، یہ شکوہ بجا۔۔۔
ہاں محبت کا یہ بھی اک انداز ہے۔۔۔۔
یہ دھرتی ہے سب کی ۔۔۔۔۔
اپنے دلوں میں ہے اس کی وفا۔۔۔۔۔
آج اس دھرتی پہ ہے ،اک ظالم وبا۔۔۔۔
اس سے لڑنے کی صرف ہے ایک ہی دوا۔۔۔۔۔۔
ہوس ِ دنیا سے باز آو۔۔۔۔
محبت بانٹو ، محبت پھیلاو۔۔۔۔
یہ دولت ، یہ نام و نمود۔۔۔
یہ شو بازیاں کس کام کی۔۔۔۔
سوچو ذرا ! کیا ایسی موت چاہتے ہو۔۔۔۔
کوی قبر تک نہ ہو گی ۔۔۔۔
کوی نشاں تک نہ ہو گا ۔۔۔۔
خدارا خدارا ! لمحہ ِ توبہ ہے یہ۔۔۔۔
وہ معاف کرے گا ۔۔۔معافی تو مانگو۔۔۔۔۔
کرونا سے وہ نکالے گا تم کو۔۔۔۔
دین و دنیا میں وہ، سر بلند رکھے گا۔۔۔۔۔
معافی تو مانگو ۔۔معافی تو مانگو۔۔۔

Comments are closed.