رنج سے راحت اچھی ہے اور شہر سے گاؤں بہتر ہے

(سید شاه سعود)

کرونا وایرس

__________

له رنځه روغه سټه ښه ده ښار نه کلی ښه دی

له دې وبا او دې بلا نه ځان ساتلی ښه دی

خیر دی یو څو ورځې دې ځان مراقبه کړي سړی

له شوره تنګ راغلی څو شیبو له غلی ښه دی

ډیره موده وشوه جذبې مو چا مینځلي نه دي

زړګی مو هم لکه د لاس او مخ مینځلی ښه دی

چاته په لاس نه ورکولو به زوریږو مګر

خیر دی یو څو ورځې دا جبر هم زغملی ښه دی

_____________

رنج سے راحت اچھی ہے اور شہر سے گاؤں بہتر ہے

اس وبا سے آپ اور اپنا آپ بچاؤں بہتر ہے

خوب ہے بندہ اپنے آپ کو یوں ہی کچھ دن سستا لے

شور و غل سے تنگ ہوؤں کو گھر کی چھاؤں بہتر ہے

اک مدت سے اپنے جذبے یاں کسی نے نہ دھوئے

ہاتھ اور منہ کے ساتھ اگر دل بھی دھلواؤں بہتر ہے

ہاتھ کسی سے نہ ملانے پر دل دکھے گا لیکن

خیر ہے کچھ دن تنہائی میں یوں بتاؤں بہتر ہے

Comments are closed.