یہ نرسیں بیٹیاں بہنیں

(محمد علی ایاز)

یہ نرسیں بیٹیاں بہنیں
یہ میرے ڈاکٹر بھائی
یہ سب مضبوط ہی اعصاب کے مالک دکھائی دیں
مری دھرتی کے یہ ہیرو مسیحائی کے پیکر ہیں
یہ ملک و قوم کے کتنے بڑے ہیں خیر خواہ دیکھو
میں دیکھوں ان کو قلت ہے اگرچہ سازوساماں کی
مگر میدان میں اترے
یہ پھر بھی قوم کی خاطر
میں اپنے ہاتھ پھیلائے دعائیں کرتا رہتا ہوں
دعائیں سے مری لپٹے محبت کے یہ سب گجرے
میں ان کے نام کرتا ہوں
یونہی اک قوم بن کر ہم کرونے جیسے موذی سے
یقینا جنگ جیتیں گے

Comments are closed.