ضرورت ہے

(عاصم بخاری)

ضرورت ہے
ابھی توبہ،کی استغفار کی ہم کو
نہیں حل ہوگیا ہے مسٸلہ کوٸی
کرونا کا
یہ تدبیریں ہماری احتیاطیں ہیں
گھروں میں بند ہو جانا
لگانا کرفیو ہر جا
حقیقت میں
ہمیں گھر بیٹھ کے رو روکے
سجدے کرکے مالک کو
منانے کی ضرورت ھے۔
بہت ناراض لگتا ہے
کہ اُس نے اپنے گھر کے در
بھی ہم پہ بند کر ڈالے
مصیبت کی
کڑی عاصم بخاری اس
گھڑی میں بھی
ابھی تک ہم نہیں سنبھلے
ابھی تک ہم نہیں بدلے
ہمیں اپنے رویوں کو
بدلنے کی ضرورت ھے
وگرنہ یہ
کرونا واٸرس مچھر ِ نمرودی
سے بھی بڑھ کر
فرعونیت کو توڑے گا
زمیں پر زعم ِ طاقت ور نہ چھوڑے گا

Comments are closed.