مہلک بیماری

(محمد الیاس ثاقب)

(مرګوني ناروغتیا)

مرګــــوني ناروغتیا پۀ دنیا رو رو راخوره شوه
نامه ئې کـــــرونا ده وبـــا رو رو راخوره شوه

د یو ځاے نه بل ځاے ته رسېده لکـــــه سیلـۍ
چاپېره پۀ نړۍ کښې خـــورېده لکــــــه سیلـۍ
هر ښار کښــــې تاوېده راتاوېده لکــــــه سیلـۍ
پۀ مرګ پســـې د خلقو ګرځېده لکــــــه سیلـۍ
پۀ شان لکه د تېزې هــوا رو رو راخوره شوه
نامه ئې کـــــــــرونا ده وبا رو رو راخوره شوه

پــــــــوهانو د کـــــرونا شکل تــاج متعارِف کړو
نړۍ ته پۀ ګوټ ګوټ ئې د دۀ راج متعارِف کړو
مخ لاس وینځل ئې خلقو کښې رِواج متعارِف کړو
پۀ کور دننه ناسته ئـــــــــې علاج متعارِف کړو
د ویـرې ترَهې سپوره فضـــا رو رو راخوره شوه
نامه ئې کــــــرونا ده وبــــا رو رو راخوره شوه

وطن کښې طبیبان د دې د حل پۀ لټون سر دي
د هـر بیمار صحت له مکمـــــل پۀ لټون سر دي
لګیا دي لټــــوي دارو دُرمــــــل پۀ لټون سر دي
علاج ګوري کـــړي غم د چاپېرچل پۀ لټون سر دي
افسوس دے خبر نۀ شو بلا رو رو راخوره شوه
نامــــه ئې کــــــرونا ده وبا رو رو راخوره شوه

مکتب پۀ نظر راغے نــــــۀ کـــتاب پۀ نظر راغے
جهان راته همـــــه سیلاب سیلاب پۀ نظر راغے
لوئي قهر لوئي غضب دے لوئي عذاب پۀ نظر راغے
ایلــــــــه راتـه مُسَبِّبُ الاَســــــباب پۀ نظر راغے
پۀ شونډو مې ثاقــــبه دُعا رو رو راخوره شوه
نامـــــه ئې کـــــرونا ده وبا رو رو راخوره شوه

مہلک بیماری ( اردو ترجمہ)
مار دینے والی بیماری آہستہ آہستہ دنیا پر چھا گئی۔
اس کا نام کرونا ہے یہ وبا آہستہ آہستہ پھیلتی گئی۔

وطن میں سارے طبیب (ڈاکٹر) اس کا حل ڈھونڈنے میں لگے ہوئے ہیں۔
ہر بیمار کی مکمل صحت کے لیے تلاش میں ہیں۔
دارو درمل ڈھونڈنے میں لگے ہوئے ہیں ۔
انہیں گرد وپیش کا غم ہے علاج ڈھونڈھ رہے ہیں۔
افسوس کہ ہمیں خبر تک نہیں ہوئی اور یہ بلا آہستہ آہستہ پھیلتی گئی۔
اس کا نام کرونا ہے یہ وبا آہستہ آہستہ پھیلتی گئی۔
ایک جگہ سے دوسری جگہ ہوا کی طرح پہنچتی گئی۔
پوری دنیا میں ہوا کی طرح پھیلتی گئی۔
ہر شہر میں ہوا کی طرح چلتی رہی۔
لوگوں کو مارنے کے لیے ہوا کی صورت پھرتی رہی۔
آہستہ آہستہ تیز ہوا کی صورت پھیلتی گئی ۔
اس کا نام کرونا ہے یہ وبا آہستہ آہستہ پھیلتی گئی۔

اہلِ علم نے اس کی شکل تاج کی صورت متعارف کی۔
پوری دنیا کے کونے کونے میں اس کے راج کی بات کی۔
منہ ہاتھ دھونے کے رواج (بچاو کے لیے) کو عام کرنے کی بات کی
اور گھر کے اندر رہنا اس کا علاج تجویز کر گئے۔
خوف و وحشت کی منحوس فضا پھیلتی گئی ۔
اس کا نام کرونا ہے یہ وبا آہستہ آہستہ پھیلتی گئی۔

اب مکتب دکھائی دیتا ہے اور نہ کتاب دکھائی دیتی ہے۔
سارا جہاں ایک سیلاب کے مانند نظر آرہا ہے۔
ایک قہر ایک غضب اور بڑا عذاب نظر آرہا ہے۔
اب کہیں جا کے مسبب الاسباب پر ہماری آنکھیں ٹک گئی ہیں۔
اے ثاقب میرے ہونٹوں پر دعا آہستہ آہستہ پھیلتی گئی۔
اس کا نام کرونا ہے یہ وبا آہستہ آہستہ پھیلتی گئی۔

Comments are closed.