چاند بھی گہنا گیا ہے

( کرنل سید مقبول حسین )

دعائیں
چاند بھی گہنا گیا ہے
ہر طرف تاریک سائے
روشنی کو ڈس رہے ہیں
کوئ ان دیکھا سا دشمن
چار سو پھرنے لگا ہے
ہائے مکتب بند ہوئے ہیں
مسجدوں میں ھو کا عالم
رونقِ کعبہ بھی پھیکی
ماند چہرے پڑ گئے ہیں
کیا جمودِ زندگی ہے
اے مرے اللہ تو سن لے
آہ و زاری تو ہماری
گر قبولے تو دعایئں
سانس لینے پھر لگیں ہم
رونقیں ہو جایئں پھر سے
مسجدیں آباد ہوں بس
اے خدائے دو جہاں سن
ہم دعایئں کر رہے ہیں

Comments are closed.