پشتو اور اردو زبان کی مایہ ناز ادیبہ اور شاعرہ زیتون بانواور معروف کالم نگار ، صحافی اور افسانہ نگار طارق اسماعیل ساگر کے انتقال پر چیئرمین اکادمی ادبیات پاکستان پروفیسر ڈاکٹر یوسف خشک کا اظہارِ تعزیت

اسلام آباد(پ ر)۔زیتون بانو پشتو اور اردو زبان کی معروف ادیبہ اور شاعرہ ہیں۔ انھیں ادبی حلقوں میں نہایت عزت و احترام کی نگاہ سے دیکھا جاتا تھا ۔ یہ بات اکادمی ادبیات پاکستان کے چیئرمین پروفیسر ڈاکٹر یوسف خشک نے اپنے ایک تعزیتی بیان میں کہی ۔انہوں نے کہا کہ زیتون بانو دس سے زائد کتابوں کی خالق ہیں ،جن میں ’برگِ آرزو ، وقت کی دیلیز پر، کچکول ، ھندارہ ،برگد کا سایہ ، مات بنگڑی، زندہ رکھ ، خوبونہ ، ژوندی غمونہ اور منجیلہ‘ شامل ہیں ۔ ادب کے شعبہ میں ان کی گراں قدر خدمات کے اعتراف میں حکومتِ پاکستان نے انھیں صدارتی تمغہ برائے حسنِ کارکردگی سے نوازا ۔ اس کے علاوہ ان کی ایک کتاب کو اکادمی ادبیات پاکستان کی طرف سے سال کی بہترین کتاب پر خوشحال خان خٹک ایوارڈ بھی دیا گیا ۔انہوں نے کہاکہ اکادمی ادبیات پاکستان نے معمار ادب سیریز کی کتاب ”زیتون بانو:فن و شخصیت“ بھی شائع کی ہے۔ چیئرمین اکادمی پروفیسرڈاکٹر یوسف خشک اور اکادمی ادبیات پاکستان کے دیگر کارکنوںنے آج پشاور میں ان کی نمازِ جنازہ میں شرکت کی اوراکادمی کی طرف سے اُن کی قبر پر پھولوں کی چادر چڑھائی گئی۔ چیئرمین اکادمی نے ان کے اہلِ خانہ سے دلی تعزیت کا اظہار کیا ۔ ڈاکٹر یوسف خشک، چیئرمین اکادمی نے معروف ادیب ، کالم نگار اور افسانہ نگار طارق اسماعیل کے انتقال پربھی گہرے رنج و غم کا اظہار کیا اور کہا کہ طارق اسماعیل ساگر کے انتقال سے اردو ادب ایک اہم لکھنے والے سے محروم ہوگیا ہے۔وہ 72سے زائد کتابوں کے خالق تھے جن میں ’دھویں کی دیوار‘،’اور حسار ٹوٹ گیا‘، ’ریڈ الرٹ‘اور دیگراہم کتابیں شامل ہیں۔ انہوں نے مرحوم طارق اسماعیل ساگر کی مغفرت اورلواحقین کے لیے صبر جمیل کی دعا کی۔

Pakistan Academy of Letters, Islamabad

Press Release

Prof. Dr. Yousuf Khushk, Chairman PAL, extends condolences on the demise of renowned Pashto and Urdu writer and poetess Zaitoon Bano and renowned columnist, journalist and novelist Tariq Ismail Sagar.

Islamabad(P.R) Zaitoon Bano is a well-known Pashto and Urdu language writer and poetess. she was held in high esteem in literary circles. This was stated by the Prof. Dr. Yousuf Khushk, Chairman Pakistan Academy of Letters (PAL) in a condolence statement.

He said that Zaitoon Bano is the author of more than ten books, including ‘Berg-e-Arzoo, Waqt-Ki-Dehleez-Par, Kachkul, Hindara, Bargad Ka Saaya, Mat Bangari, Zinda Rakh, Khobona, Jhundi Ghamuna and Manjeela’

In recognition of her valuable services in the field of literature, the Government of Pakistan awarded her the Presidential Medal for Excellence. In addition, one of her books was awarded the Khushal Khan Khattak Award for the best book of the year by the PAL.

He said that the PAL has also published the book “Zaitoon Bano: Art and Personality” of the Memar-e-Adab series.

Chairman PAL Prof. Dr. Yousuf Khushk and other Officers of the PAL attended her funeral prayers in Peshawar today and a wreath was laid on her grave by the PAL. The Chairman of the Academy extends his heartfelt condolences to her family members.

Dr. Yousuf Khushk, Chairman,PAL, also expressed deep sorrow over the demise of renowned writer, columnist, novelist and Fiction writer Tariq Ismail Sagar. He said that with the demise of Tariq Ismail Sagar, Urdu literature has lost an important writer.

He authored more than 72 books, including “Dhuwain Ki Dewaar”, “Aur Hassar Toot Gia”,”Red Alert”, and more. He prayed for the forgiveness of the late Tariq Ismail Sagar and patience for his family.

Comments are closed.