علامہ اقبال کے یوم پیدائش کی مناسبت سے ایمبیسیڈرز کانفرنس کا انعقاد

President Dr Arif Alvi in a group photo with Federal Minister for Education, Mr Shafqat Mehmood, and foreign ambassadors at a ceremony relating to Iqbal Day, at Aiwan-e-Sadr, on 10-11-2020.

اسلام آباد۔10نومبر (اے پی پی):صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت کا ریاست مدینہ کا تصور علامہ اقبال کے مسلمانوں کی نشاۃ ثانیہ کے پیغام کے عین مطابق ہے۔ کسی کو اس معاملے پر طنز نہیں کرنا چاہیے۔ دنیا کے بعض ممالک نشاۃ ثانیہ کے معاملے پر پروپیگنڈہ کر رہے ہیں۔ تاہم عمران خان جیسے رہنما اس معاملے پر اپنے پائوں پر کھڑے ہیں۔ علامہ اقبال نے ہندوستان میں اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کے استحصال کی جو بات کی تھی وہ آج سچ ثابت ہوئی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کو علامہ اقبال کے یوم پیدائش کی مناسبت سے ایمبیسیڈرز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں کورونا وباءدوبارہ پھیل رہی ہے اور میں مسلسل اس بات کی یاددہانی کرا رہا ہوں کہ ہمیں احتیاطی تدابیر پر عمل کرنا چاہیے‘ ماسک پہننے چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ علامہ محمد اقبال کی سوچ اور شاعری آفاقیت پر مبنی ہے۔ وہ پاکستان سمیت سب قوموں بالخصوص امت مسلمہ کے شاعر تھے۔ انہوں نے دو قومی نظریہ کے بارے میں واضح موقف اختیار کیا۔ صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کے قیام کے وقت ہم نے پارٹی منشور کے حوالے سے سوچ بچار کی۔ ہم نے یہ طے کیا کہ ہماری ریاست کا ماڈل اسلامی فلاحی ریاست ہونا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کا ریاست مدینہ کا تصور علامہ اقبال کے مسلمانوں کے نشاۃ ثانیہ کے پیغام کے عین مطابق ہے۔ کسی کو اس معاملے پر طنز نہیں کرنا چاہیے۔ دنیا کے بعض ممالک نشاط ثانیہ کے معاملے پر پروپیگنڈہ کر رہے ہیں تاہم عمران خان جیسے رہنما اس معاملے پر اپنے پائوں پر کھڑے ہیں۔ علامہ اقبال نے ہندوستان میں اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کے استحصال کی جو بات کی تھی وہ آج سچ ثابت ہوئی ہے۔ صدر مملکت نے کہا کہ چند سالوں میں تحریک پاکستان میں شامل مسلمان رہنمائوں کو یہ ادراک ہوگیا تھا کہ ہندوستان میں اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کا استحصال کیا جائے گا۔ علامہ اقبال اور قائد اعظم محمد علی جناح نے بار بار برصغیر کے مسلمانوں کو خبردار کیا کہ مسلمانوں کے حقوق کے تحفظ کے لئے الگ وطن ضروری ہے۔ علامہ اقبال کو یورپ میں دوران تعلیم احساس ہوا کہ مسلمان بالخصوص ہندوستان کے مسلمان زوال پذیر ہیں جس سے ان کو صدمہ ہوا۔ اس اثر کا اظہار ان کی شاعری میں نظر آتا ہے۔ انہوں نے اس وقت اپنے اشعار کے ذریعے مسلمانوں میں نئی روح پھونکی۔ ان کی شاعری نے امت مسلمہ کو جگانے میں اہم کردار ادا کیا۔ صدر مملکت عارف علوی نے کہا کہ علامہ محمد اقبال کے قائداعظم محمد علی جناح کو لکھے گئے خطوط ان کی سوچ کی عکاسی کرتے ہیں۔ 1930ءمیں خطبہ الہ آباد میں انہوں نے مسلمانوں کے لئے ایک ایسی ریاست کا مطالبہ کیا جس میں اکٹھے ہوکر وہ اپنی زندگی گزار سکیں۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب‘ سندھ‘ بلوچستان اور کے پی کے کو مسلم اقلیتی صوبہ بنایا جائے۔ بنگال کو بھی مسلم اقلیتی صوبے کا درجہ دیا جائے۔ صدر مملکت نے کہا کہ علامہ محمد اقبال کی بہت سی پیشنگوئیاں درست ثابت ہوئی ہیں۔ بھارتی حکومت جو حالات پیدا کر رہی ہے اس سے وہاں انتشار پیدا ہوگا۔ دو قومی نظریہ اس وقت کا بہترین نظریہ تھا۔ ہم نے علامہ اقبال کے مسلمانوں کی نشاۃ ثانیہ کے نظریے کے تناظر میں پارٹی سٹرکچر اور تعلیمی نصاب کا تعین کیا۔ انہوں نے کہا کہ علامہ محمد اقبال نے اپنے لیکچرز میں ایمان‘ منطق اورصوفی ازم پر زور دیا۔ ہمارے لئے قرآن پاک کی تعلیمات مشعل راہ ہیں۔ انسان میں اس وقت تبدیلی پیدا ہوتی ہے جب وہ روحانی اعتبار سے مضبوط ہوتا ہے۔ علامہ اقبال نے اپنی تصانیف میں موت اور زندگی کا تصور بھی پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ سرسید احمد خان سمیت دیگر مسلمان رہنماﺅں نے برصغیر کے مسلمانوں کی سوچ بدلنے کی کوشش کی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان نشاۃ ثانیہ کی طرف جارہا ہے۔ یہ ہمارے دلوں کی آواز ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی موجودہ قیادت اسی عزم و ہمت سے کام کرے گی تو اس سے پاکستان ترقی کرے گا۔ تقریب سے وفاقی وزیر برائے تعلیم و پیشہ وارانہ تربیت شفقت محمود‘ سینیٹر ولید اقبال‘ کرغزستان ‘ اٹلی‘ سپین‘ جرمنی اور بنگلہ دیش کے سفیروں سمیت چیئرمین پاکستان اکادمی ادبیات ڈاکٹر یوسف خشک نے بھی خطاب کیا۔


ISLAMABAD, Nov 10 (APP): President Dr. Arif Alvi on Tuesday said that with the present government’s vision of the establishment of Riasat-e-Madina, Pakistan was moving towards the Renaissance of Muslims in line with the philosophy of Allama Muhammad Iqbal.

“There should not be any taunting about the establishment of Riasat-e-Madina, as it the voice of everyone’s heart including me and you,” he said while addressing an event titled “The Vision of Iqbal: Ambassador’ Conference” here at the Aiwan-e-Sadr.

The president said that despite the propaganda of enemies, some brave leaders in the Muslim world including Prime Minister Imran Khan stood firm on Muslims’ Renaissance through the ideals of peace, harmony, unity and coexistence as per the vision of great thinker and poet Allama Muhammad Iqbal.

Recalling the historic 1930 address of Allama Muhammad Iqbal in Allahabad, he said the current situation of minorities’ exploitation in India were reflective of what Allama Iqbal had viewed about the two-nation theory and the creation of a separate homeland for Muslims of the subcontinent.

The president said that as the vision and poetry of Allama Iqbal was universal with focus on Muslims’ Renaissance, he was the poet of Ummah.

Recalling the formation of Pakistan Tehrik-e-Insaf (PTI) over two decades back, President Alvi said, since Prime Minister Imran Khan was inspired by the thoughts of Allama Iqbal, they then had decided that their government should be on the model of the State of Madina.

He recounted various political, intellectual and philosophical achievements of Allama Iqbal including his efforts for the creation of Pakistan.

The president said that Allama Muhammad Iqbal, like the founder of nation Quaid-e-Azam, was initially supportive of a united India but later after realizing the psychology of Hindus, who wanted their dominance, gave the idea of a separate Muslim state and started political efforts to achieve the objective.

Minister for National Education and Professional Training Shafqat Mehmood while speaking on the occasion said that Allama Muhammad Iqbal besides other things also addressed the youth and highlighted the importance of education.

He said the present government was working hard for the promotion of education and for the first time introduced a national curriculum in the country.

Senator Waleed Iqbal, grandson of Allama Muhammad Iqbal, Chairman Academy of Letters Dr. Yusuf Khushak, Dr. Ayub Nasir (Poet), Prof. Dr. Shahid Iqbal Kamran, and Ambassadors and High Commissioners of different counties including Germany, Italy, Spain, Bangladesh and Kyrgyzstan also addressed the conference and highlighted various aspects of Allama Iqbal’s poetry.

Comments are closed.