افسانہ نگار، نثر نگار دانشور حمید سندھی اور نامور شاعر جاویدرسول نگری کے انتقال پر اکادمی ادبیات پاکستان کی تعزیت

اسلام آباد (پ ۔ر)اکادمی ادبیات پاکستان کے چیئرمین محمد سلمان نے سندھ کے افسانہ نگار، نثر نگار ، دانشور اور متعدد کتابوں کے مصنف حمید سندھی اور پنجابی کے نامور شاعر جاویدرسول نگری کی وفات پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ حمید سندھی کوان کی ادبی خدمات کے اعتراف میں اکادمی ادبیات پاکستان کی طرف سے ”شا ہ عبد اللطیف بھٹائی ایوارڈ “اورحکومت پاکستان کی طرف سے تمغہ امتیازسے بھی نوازا گیا۔ ان کی کتابیں سندھی افسانوی ادب کے لیےگراں قدر سرمایہ ہیں۔ان کی کتابیں ”ویریون“، ”اداس وادیون“، ”جاگ بہ تنھجی جئی ساں“، ”درد وندی جو دیس“سندھی کی اہم کتب میں شمار ہوتی ہیں۔ انہوں نے 60سے80دہائی تک سندھی کا ایک اہم رسالہ ”روح ریحان“ بھی نکالا جس نے بہت سے اہم لکھنے والوں کو متعارف کرایا۔ جاوید رسول نگری کا شعری مجموعہ”پنڈ غماں دی“ پنجابی شعری ادب میں ایک اہم کتاب ہے۔ دونوں اہل قلم پاکستانی ادب میں اہمیت کے حامل تھے۔ ان کے انتقال سے پاکستانی ادب سندھی اور پنجابی کے اہم لکھنے والوں سے محروم ہوگیا ہے۔ چیئرمین اکادمی محمد سلمان نے مرحومین کے لیے مغفرت اور لواحقین کے لیے صبر جمیل کی دعا کی۔

Comments are closed.