پانچ روزہ تقریبات بسلسلہ یوم اقبال کی اختتامی تقریب

اسلام آباد(پ۔ر)فکر اقبال پر گامزن ہو کر ہی ہم ترقی کی طرف سفر کرسکتے ہیں۔ ان کی فکر نے نہ صرف برصغیر بلکہ عالم اسلام کو بھی متاثر کیا۔ ہمیں صحیح سمت میں جاناہے تو اقبال کی فکر کو اپنانا ہوگا۔ ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر ندیم شفیق ملک، سیکرٹری ،قومی تاریخ و ادبی ورثہ ڈویژن، نے اکادمی ادبیات پاکستان، کے زیر اہتمام فکر علامہ اقبال کے فروغ کے حوالے سے ”پانچ روزہ تقریبات بسلسلہ یوم اقبال “کی اختتامی تقریب میں کیا۔ وہ اس تقریب کے مہمان خصوصی تھے۔ مجلس ِ صدار ت میں سید سلیم حسین گردیزی(آزادکشمیر)، قاسم نسیم(گلگت بلتستان) ، ڈاکٹر آصف ریاض قدیر (امریکہ )شامل تھے۔ ڈاکٹر انعام الحق جاوید، چیئرمین ، اکادمی ادبیات پاکستان نے مہمانوں کو شکریہ ادا کیا۔ نظامت محبوب ظفر نے کی۔ڈاکٹر ندیم شفیق ملک نے کہا کہ اکادمی ادبیات پاکستان نے شبانہ روز محنت سے یوم ِ اقبال کے 5روزہ تقریبات کو کامیاب بنایا۔ پانچ روز تسلسل کے ساتھ فکر ِ اقبال کے حوالے سے اور پاکستانی زبانوں میں شعر وادب کی نشستیں منعقد ہوتی رہیں۔ اقبال کے ہر پہلو پر خوبصورت پروگرام پیش کیے ۔تمام معاونین ، ادبی تنظیموں ،تعلیمی اداروں، پبلشرز اور دیگر اداروں جنہوں نے اکادمی ادبیات پاکستان کے اس 5روزہ تقریبات بسلسلہ یوم اقبال میں شرکت کر کے اس کو رونق بخشی۔ ڈاکٹر انعام الحق جاوید، چیئرمین اکادمی ادبیات پاکستان نے کہا کہ ڈاکٹر ندیم شفیق ملک، سیکرٹری ، قومی تاریخ و ادبی ورثہ ڈویژن، کی رہنمائی اور سرپرستی کی وجہ سے ہم یوم اقبال کے سلسلہ میں 5روزہ تقریبات کو منعقد کرنے میں کامیاب ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ ان پانچ دنوں میں اقبال کے تمام گوشوں پر سیر حاصل گفتگو ہوئی ۔ کلام اقبال پر بچوں نے ٹیبلو، مصورانہ خاکے اور دیگر پروگراموں کے ذریعے اقبال کو زبردست خراج تحسین پیش کیا۔پنجاب، سندھ، خیبر پختونخوا، بلوچستان، آزاد کشمیر، گلگت بلتستان اور بیرون ملک سے آئے ہوئے نمائندہ ادیبوں کی شرکت اور ان تقریبات کو کامیاب کرانے پر احسان مند ہوں ۔ سید سلیم حسین گردیزی نے کہا کہ ڈاکٹر ندیم شفیق ملک کی کوششوں سے اکادمی مزید فعال ہوگئی ہے اور جس طرح یوم اقبال کی 5روزہ تقریبات کے ذریعے سے اقبال شناسی کے پروگرام ترتیب دیے گئے اور جس طرح اقبال کی سوچ اور کلام کو اجاگر کیا گیا ہے ۔ ڈاکٹر ندیم شفیق ملک مبارکباد کے مستحق ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری ادب کو برابری کی سطح پر نمائندگی دینے اور کشمیری شعر و ادب کے فروغ میں کلیدی کردار ادا کرنے پر میں ان کا شکرگزار ہوں۔ڈاکٹر آصف ریاض قدیر نے کہا کہ اکادمی ادبیات پاکستان کی تقریبات سے ظاہر ہوتا ہے کہ وہ اقبال کی فکر، تعلیمات اور کلام کو کس قدر اہمیت دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اقبال کے شاہین پوری دنیا میں اقبال کے پیغام کو پہنچار ہے ہیں۔ قاسم نسیم نے کہا کہ ڈاکٹر انعام الحق جاوید، چیئرمین ، اکادمی ادبیات پاکستان اور ڈاکٹر ندیم شفیق ملک، سیکرٹری ، قومی تاریخ و ادبی ورثہ ڈویژن، مبارکباد کے مستحق ہیں کہ انہو ں نے 5روزہ تقریبات بسلسلہ اقبال میں ملک کے چاروں صوبوں اور گلگت /بلتستان کے ادب کو بھی نمائندگی دی اور اس کے زبان و ادب کے فروغ میں کردار ادا کیا۔ آخر میں اکادمی ادبیات پاکستان کے زیراہتمام منعقدہ 5روزہ تقریبات بسلسلہ اقبا ل میں شرکت کرنے والی ادبی تنظیموں جن میں پنجابی ادبی پرچار، اسلام آبادکے عمران نواز گوندل،پوٹھوہاری لینگوےج اینڈ کلچرل کونسل، اسلام آبادکے راجہ ضمیر عباسی، شاہ عبدالطیف بھٹائی سوشل اینڈ کلچرل ایسوسی ایشن، اسلام آبادکے زاہد حسین جتوئی،اقبالین سوسائیٹی، اسلام آباد کے پروفیسر قاضی عارف حسین،پرفارمنگ آرٹ سرکل اسلام آباد کے حسن عباس رضا، پشتو ادبی سوسائیٹی اسلام آباد کے اقبال حسین افکار،حلقہ اربابِ ذوق اسلام آباد کے خلیق الرحمن،تصویر خانہ، اسلام آباد کے احمد حبیب،جام درک ویلفیئر سوسائٹی ، اسلام آبادکے ضیاءالرحمن بلوچ، بزمِ گوجری، اسلام آباد کے عطاءالرحمن چوہان،مریدِ اقبال فاﺅنڈیشن (انٹرنیشنل) پاکستان، اسلام آباد کے ایس۔ایم۔ قاسمی،سرائیکی ادبی اکیڈمی، اسلام آبادکی ڈاکٹر سعدیہ کمال،انٹرنیشنل یونیورسٹی کنسورثیم برائے سماجی علوم، اسلام آباد کے مرتضیٰ نور،گندھارا ہندکو بورڈ ، اسلام آبادکے محمد ضیاءالدین،آفاق، اسلام آباد اور دائرہ علم و ادب، اسلام آباد ، پبلشروں اور والنٹیئرز کو سند اعتراف پیش کی گئیں۔
٭٭٭٭٭٭٭

“پانچ روزہ تقریبات بسلسلہ یوم اقبال “کے پانچویں دن کی تقریبات

اسلام آباد(پ۔ر)”پانچ روزہ تقریبات بسلسلہ یوم اقبال “کے پانچویں دن کی تقریبات میںدوسری تقریب سرائیکی ادبی اکیڈمی کے تعاون سے مذاکرہ:سرائیکی شعر و ادب پر اقبال کے اثرات منعقد کی گئی۔ تیسری تقریب مریدِ اقبال فاﺅنڈیشن(انٹرنیشنل) پاکستان کے تعاون سے کتاب ” اقبال کا کشمیر بنے گا اقبال کا پاکستان“ کی تقریب رونمائی منعقد کی گئی۔چوتھی تقریب تصویر خانہ کے تعاون سے ورکشاپ:اقبال اور معاصر خطاّطی منعقد کی گئی۔پانچویں تقریب، انٹر یونیورسٹی کنسورشیم برائے سماجی علوم کے تعاون سےمذاکرہ:سماجی علوم پر اقبال کے اثرات منعقد کی گئی۔ چھٹی تقریب گندھارا ہندکو بورڈ کے تعاون سے مذاکرہ:ہندکو شعر و ادب پر اقبال کے اثرات منعقد کی گئی۔ آج ”گوشہ ذکراقبال “ کے ایک ایک گھنٹے کے سات پروگرامز ہوئے۔

Comments are closed.