اقبال ، ماضی، حال اور مستقبل کے شاعر ہیں۔ وجیہ اکرم پارلیمانی سیکرٹری

اسلام آباد(پ۔ر)اقبال ، ماضی، حال اور مستقبل کے شاعر ہیں۔ ان خیالات کااظہار وجیہہ اکرم ،پارلیمانی سیکرٹری،وفاقی وزارتِ تعلیم وپیشہ ورانہ تربیت نے اکادمی ادبیات پاکستان کے زیر اہتمام فکر اقبال کے فروغ کے حوالے سے ”پانچ روزہ تقریبات بسلسلہ یوم اقبال “کے چوتھے دن فیض احمد فیض آڈیٹوریم میں ”کلام اقبال ساز و آواز“کی تقریب میں کیا۔ نامور گلوکاروں نے کلام ِ اقبال ساز وآواز کے ساتھ پیش کیا۔ ڈاکٹر انعام الحق جاوید نے مہمانوں کا شکریہ ادا کیا۔وجیہ اکرم نے کہا کہ اقبال نہ صرف عظیم شاعر بلکہ بڑے فلسفی بھی تھے۔ اقبال کی فکر انسانی زندگی کے تمام پہلوﺅں کا خوبصورتی سے احاطہ کرتی ہے۔ اقبال ، ماضی، حال اور مستقبل کے شاعر ہیں۔انہوں نے کہا کہ علامہ اقبال کے کلام کو ملک کے نامور اور نوجوان فنکاروں نے ساز وآواز کے ساتھ پیش کیا اور اس ذرےعے سے دنیا بھر میں موسیقی سے دلچسپی رکھنے والے اور دیگر لوگوں تک ان کا کلام پہنچا۔ اکادمی ادبیات پاکستان نے”پانچ روزہ تقریبات بسلسلہ یوم اقبال میں”کلامِ اقبال ساز و آواز “کی تقریب رکھی ہے، یہ اہمیت کی حامل ہے۔ اس کے ذریعے ہم علامہ اقبال کو خراج تحسین پیش کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اقبال ایک ہمہ جہت و ہمہ گیر شخصیت کے مالک تھے۔ اقبال کی شاعری میں تہذیب ، طرز معاشرت معاشی اور مذہبی معاملات کے ساتھ ساتھ، تصوف بھی شامل ہے۔ اقبال کو شاعری کے علاوہ موسیقی، آرٹس اور سائنس سے بھی دلچسپی تھی۔ انہوں نے بچوں کے لےے بہت سی نظمیں لکھیں، اقبال اپنی نسل پر خصوصی توجہ رکھتے تھے اور اُن سے امیدیں وابستہ کیں۔ اقبال ہر مکتبہ فکر کے لوگوں کے شاعر تھے۔ انہوں نے کہا کہ اکادمی ادبیات پاکستان نے یوم اقبال کے حوالے سے 5روزہ تقریبات کے سلسلے میں اقبال کے تمام پہلوﺅں کو مدنظر رکھتے ہوئے اقبال جیسے ہمہ جہت شاعر اور مفکر کو خراج تحسین پیش کیا اور اُن کے تمام گوشوں اور جہتوں کو نہایت خوبصورتی سے آشکار کیا۔ اس کے لےے اکادمی ادبیات پاکستان کے چےئرمین ڈاکٹر انعام الحق جاوید، ندیم شفیق ملک، سیکرٹری، قومی تاریخ و ادبی ورثہ ڈویژن ، یقینا مبارکباد کے مستحق ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مجھے یہ دیکھ کر خوشی ہوئی کہ یہا ں اقبال کی فکر کی مختلف جہتوں پر سیر حاصل گفتگو کے لیے نئی نشستیں ترتیب دی گئی ہیں۔ بچوں کا اقبال کے حوالے سے بچوں نے خوبصورت اقبال کے کلام پر ٹیبلوپیش کےے۔اسی طرح اقبال کے کلام کے مصورانہ خانہ کے بھی بے حد اہمیت کے حامل ہیں۔ اقبال اور موسیقی کی نشست اور اقبال کے پاکستانی زبانوں پر اثرات کے حوالے سے بے حد معلوماتی اور مفید نشستوں کا اہتمام کیا گیا ہے

Comments are closed.