”پانچ روزہ تقریبات بسلسلہ یوم اقبال “میں مشاعرہ ”نذر ِ اقبال “ اور مذاکرہ ”پنجابی شعر و ادب پر اقبال کے اثرات

اسلام آباد(پ۔ر)اکادمی ادبیات پاکستان، پاکستان کے زیر اہتمام قومی شاعر اور فکر علامہ اقبال کے فروغ کے حوالے سے ”پانچ روزہ تقریبات بسلسلہ یوم اقبال “کے افتتاحی اجلاس کے بعد مشاعرہ ”نذرِ اقبال“ منعقد ہواجس کی صدارت افتخا ر عارف نے کی۔ ڈاکٹر فاطمہ حسن مہمان ِ خصوصی تھیں۔ پروفیسر جلیل عالی مہمان ِ اعزاز تھے۔ مشاعرے میں راولپنڈی اسلام آباد اور گردونواح کے شعرا اشفاق حسین، اسلم کمال، وفا چشتی، اسلم راہی ، اختر عثمان، باصر حسن ، کرن یاسر، ڈاکٹر مظہر رضوی، امجد محمود، اقبال افکار، سلیم اختر، علی احمد قمر، شیدا چشتی، راحت سرحدی، گوہر نوید، کاشف عرفان ، اطہر ضیائ، سائل نظامی، محبوب ظفر، علی یاسر، حسن عباس رضا، طیب اللہ خان، احمد محمود الزمان، ڈاکٹر فوزیہ ملک، پروفیسر سین یونس، طاہر ہ عندلیب، جاوید احمد، منظر نقوی، شمیم حیدر سید، ناصر مینگل ، ضیاءالدین نعیم، طاہر حنفی ، عدنان بشیر، حافظ نور احمد قادری اور دیگر نے علامہ اقبال کے حضور اردو اور پاکستانی زبانوں میں اور علامہ اقبال کی زمینوں میں منظوم خراج عقیدت پیش کیا۔ نظامت انجم خلیق اور عابدہ تقی نے کی۔ ایک تقریب ادبی تنظیم پنجابی ادبی پرچار کے تعاون سے مذاکرہ بعنوان ”پنجابی شعر و ادب پر اقبال کے اثرات “منعقد ہوا۔ ڈاکٹر شائستہ نزہت مہمان خصوصی تھیں۔ سعید فارانی اورپنجابی کے دیگر اسکالرز انے موضوع کی مناسبت سے اظہار خیال کیا۔ آج ”گوشہ ذکراقبال “ کے ایک ایک گھنٹے کے 10پروگرامز ہوئے جس میں 10دانشوروں اور ادیبوں نے الگ الگ حصہ لیا۔

Comments are closed.