بزمِ فکرِ اقبال پاکستان کے زیر اہتمام ”فکرِ اقبال میں سائنسی شعور “کے موضوع پر سیمینار


اسلام آباد(پ۔ر)اقبال نے اپنے شعروں میں سائنسی فلسفہ خوب صورت انداز میں پرو دیا اور امتِ مسلمہ کے لیے ایک وسیع جہانِ فکر بسایا ہے۔ ان خیالات کا اظہار پروفیسر فتح محمد ملک نےبزمِ فکرِ اقبال پاکستان کے زیر اہتمام ”فکرِ اقبال میں سائنسی شعور “کے موضوع پر اکادمی ادبیات پاکستان کے کانفرنس ہال میں منعقدہ سیمینار سے بطور صدر خطاب کرتے ہوئے کیا۔ افتخار عارف مہمانِ خصوصی تھے۔ڈاکٹر انوار احمد، ڈاکٹر احسان اکبر،پروفیسر جلیل عالی، اعجاز الحق اعجاز، ادریس آزاد اور ڈاکٹر محمد قمر اقبال نے گفتگو کی۔پروفیسر فتح محمد ملک نے کہا کہ اقبال وہ اہم اور پیغام بر شاعر ہے جس کا سائنسی شعور پاکستان کی بنیادوں میں جگمگاتا دکھائی دیتا ہے۔اقبال نے اپنے شعروں میں سائنس کا فلسفہ خوب صورت انداز میں پُرو دیا اور امتِ مسلمہ کے لیے ایک وسیع جہانِ فکر بسایا ہے۔ ضروری ہے کہ ہم بحیثیت پاکستانی اور بہ حیثیت ایک سچے مسلمان کے اقبال کے معانی و مطالب کی گہرائی اور مفہوم کو اپنے عمل کا حصہ بنائیں۔ افتخار عارف نے کہا کہ علامہ اقبال برصغیر کے ہی نہیں 20ویں صدی کے دنیا کے عظیم شاعر تھے۔ انھوں نے اردو کے علاوہ فارسی میں بھی شعر کہے۔ انھوں نے انگریزی میں اسلامی فکر کی تشکیل جدید جامع تنصیف میں پےش کی اور اس حوالے سے یہ اہم کتاب تصنیف کی۔ اقبال مسلمانوں میں بیداری کی تحریک میں عملی طور پر شریک رہے۔خطبہ آلہ آباد میں پاکستان کا بنیادی تصور پےش کیا۔ یہ سب باتیں اہم ہیں لیکن ہمیں اقبال کو ان کی مجموعی شخصیت کے طور پر ایک کلیت میں دیکھنا چاہیے خانوں میں بانٹ کر کسی عظیم شخصیت کا جائزہ نہیں لیا جا سکتا، قدرو قیمت کا اندازہ اجتماعی دانش اور مجموعی کارکردگی پر ہونا چاہیے۔ ساری دنیا میں جہاں کہیں بھی اسلام کی فکری بنیادوں پر گفتگو کی جاتی ہے وہاں اقبال کا کلام حوالوں کے طور پر پےش کیا جاتا ہے۔ڈاکٹر انوار احمد نے کہا کہ پاکستانی ادب پر اقبال کے انمٹ نقوش ہیں۔اقبال اعلیٰ انسانی اقدار کے ترجمان ہیں جس کی تشریح آنے والے زمانوں میں ہوتی رہے گی۔ پروفیسر جلیل عالی نے کہا کہ اقبال کا کلام اور پیغام وہ آفاقی فکر ہے جو دنیا بھر کے مسلمانوں کی فکری رہبری کرتی ہے۔ اقبال ایک مفکر، ایک مصور، سائنس پرگہری نظر رکھنے والے اور پاکستانی قوم کا مستقبل شناس شاعر ہے۔ اقبال کے ہاں فکری جہتیں تخلیقِ کائنات سے آشنا کرتی ہیں اور مغرب کے جدید فلسفے کے مقابلے میں اسلامی اور انسانی فکر اور ادب کو متعارف کراتی۔اقبال کی فکرکو سمجھنے اور انھیں اپنے لیے قابل تقلید بنانے کی ضرورت ہے۔ ڈاکٹر احسان اکبر نے کہا کہ علامہ اقبال وہ عالمگیر سطح کا مفکر اور شاعر ہے جس نے اپنے تصور میں پاکستان اور اس خطے کے مستقبل کی تصویریں بنائی اور سائنسی اصولوں خطوط پر قوم و ملک کی تشکیل اور خدوخال بنائے۔ اقبال سے پہلو تہی کر کے کوئی نوجوان آگے نہیں بڑھ سکتا۔ اقبال پاکستان کا حقیقی مصور ہے۔ اعجاز الحق اعجاز نے ویڈیو پیغام میں کہا کہ اقبال سائنسدان نہیں تھے لیکن بہت سے سائنسی موضوعات ان کے پیغام فکر کا حصہ تھے۔ وہ اپنے زمانے کے سائنسی موضوعات سے کافی حد تک آگاہی رکھتے تھے اور ان کے فلسفیانہ پہلو پر دسترس رکھتے تھے۔ ادریس آزاد نے نیوٹن اور آئن سٹائن کے سائنسی نظریات کی روشنی میںعلامہ اقبال کی علمی و فکری جہتوں پر روشنی ڈالی۔


Press Release
Rich tribute paid to Allama Muhammad Iqbal

ISLAMABAD: A rich tribute was paid to Allama Muhammad Iqbal here at literary seminar titled “Fikr-e-Iqbal Mein Sainsi Shaoor”, organized by “Bazm-e-Fikre—e-Iqbal Pakistan on Tuesday here at conference Hall of Pakistan Academy of Letters (PAL).

Eminent scholar Iftikhar Arif, Director General National Language Promotion Department (NLPD) was the chief guest on the occasion. While Prof. Fateh Muhammad Malik presided over the seminar.

The literary session was also attended by eminent scholars including Dr. Ihsan Akbar, Prof. Jalil Aali, Ijazul Haq Ijaz, Idress Azad, Fateh Muhammad Malik and Dr. Muhammad Qamar Iqbal.

Speaking on the occasion, Prof. Fateh Muhammad Malik said that Pakistan foundation enlighten with the scientific consciousness of Allama Muhammmad Iqbal. He said that Allama has beautifully presented scientific philosophy in his poetry, adding that it was wide scope for the Ummat-e-Muslima. He said that we need to follow the philosophy of Allama Iqbal being a Muslim.

Chief guest Iftikhar Arif said tha Allama Muhammad Iqbal was great scholar and thinker of 20th century. He done poetry in Urdu and Persian. “Allama Iqbal presented Islamic philosophy in English” he said. He said that Allama Iqbal was personally took part in the awareness of Muslim.

He said that Allama also presented ideology of Pakistan in Khutba Allabad.

Eminent scholar, Dr. Ihsan Akbar, Prof. Jalil Aali, Ijazul Haq Ijaz, Dr. Anwar Ahmed, Idress Azad and Dr. Qamar Iqbal also spoke on the occasion and paid glowing tribute to the literary contributions of Allama Muhammad Iqbal.

Comments are closed.