اکادمی ادبیات پاکستان کی کتاب :پروفیسر محمد طہٰ خان :شخصیت اورفن شائع ہو گئی

اسلام آباد (پ۔ر) اکادمی ادبیات پاکستان کے تحت پاکستانی ادب کے معمار کے سلسلے کی نئی کتاب”پروفیسرمحمد طہٰ خان :شخصیت اورفن“ شائع ہو گئی ہے۔اس کتاب کے مصنف ڈاکٹرعمرقیاز قائل ہیں ۔ پروفیسر محمد طہٰ خان :شخصیت اور فن انتہائی محبت ،عرق ریزی اور محنت سے تحریر کی ہے ۔کتا ب کی تدوین کا کام ڈاکٹر اجمل خان بصر نے کی۔ سید جنید اخلاق ، چیئرمین اکادمی ادبیات پاکستان نے کتاب کی اشاعت کے موقع پر کہا کہ پروفیسر محمد طہٰ خان کی مزاحیہ شاعری میں کلاسیکل اور نیم کلاسیکل مزاحیہ شاعری کی صورتیں نظرآتی ہیں جو کہ ایک منفرد اور الگ تھلگ خصوصیت ہے۔اُنھوں نے جس انداز میں مزاحیہ غزلیں، نظمیں اور قطعات کہے ہیں ان کی مثال کم ملتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اُردو ادب میں طنز و مزاح کی روایت اگرچہ بہت پرانی ہے لیکن اس روایت کو سنبھالنے والے ہردور میں معدود ِ چندرہے ہیں،جنھوں نے طنز کے کانٹوں اور مزاح کے پھولوں سے زبان و ادب کو سجایا ہے۔پشاور میں مرزا محمود سرحدی بھی تھے،جن کے طنز میں بڑی کاٹ اور جس کے مزاح میں بڑی دل پذیری تھی ۔ مرزا محمود سرحدی کے بعدپروفیسر محمد طہٰ خان ہی قابلِ اعتنا مزاحیہ شاعر تھے اور اب بھی ہیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستانی ادب کے معمار کے سلسلے کی کتابوں کا بنیادی مقصد ،جہاں ایک طرف پاکستانی زبانوں کے اہم لکھنے والوں کی خدمات کا اعتراف کرنا اور انھیں عام قارئین تک پہنچاناہے ، وہیں ادب کے محققین، ناقدین ، اور اردو ادب کے طالب علموں کوان کے متعلق بنیادی نوعیت کا تحقیقی و تنقیدی مواد فراہم کرنا بھی ہے۔یہی وجہ ہے کہ اس سلسلے کی تمام کتابوں کی نوعیت تعارفی ہونے کے ساتھ ساتھ ایک حد تک تحقیقی و تنقیدی بھی ہے۔پروفیسر محمدطہٰ خان،اس سلسلے کی139ویں کتاب ہے۔ پروفیسر محمد طہٰ خان صوبہ خیبر پختون خوا کے سب سے زیادہ باصلاحیت مزاح نگارہیں۔انھوں نے تعمیری طنز کے ذریعے معاشرتی ناہم واری اور سماجی ناانصافی کو منظر عام لائے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پروفیسر محمدطہٰ خان کی مزاحیہ شاعری معاشرے کی ناانصافیوں، ناہم واریوں، اقرباپروری، رشوت،مہنگائی اور سفارش وغیرہ جیسے موضوعات اور تلخ حقائق پر خامہ فرسائی کرتی ہے۔ یہ کتاب240صفحات پر مشتمل ہے، اس کی قیمت 300روپے ہے۔پروفیسر طہٰ خان کی شخصیت اور فن کے حوالے سے یہ کتاب اہم حوالے کا درجہ رکھتی ہے۔ کتاب مارکیٹ ، اکادمی کی بُک شاپ اور اکادمی کے ریجنل دفاتر میں دستیاب ہے۔

Comments are closed.