اکادمی ادبیات پاکستان کی کتاب “ڈاکٹر انعام الحق جاوید :شخصیت اورفن “شائع ہو گئی

اسلام آباد (پ۔ر) اکادمی ادبیات پاکستان کے تحت پاکستانی ادب کے معمار کے سلسلے کی نئی کتاب”ڈاکٹر انعام الحق جاوید :شخصیت اورفن“ شائع ہو گئی ہے۔ اس کتاب کے مصنف ڈاکٹر امجد علی بھٹی ہیں جوخود بھی ایک معروف محقق، نقاد اور ادیب ہیں۔ ڈاکٹر انعام الحق جاوید : شخصیت اور فن ، ڈاکٹر امجد علی بھٹی نے بہت دل جمعی ، محنت اور اخلاص سے تحریر کی ہے۔ کتاب کی تدوین کا کام اصغر عابد نے کیا ۔ اکادمی کے چیئرمین سید جنید اخلاق نے کتاب کی اشاعت کے موقع پر کہا کہ ڈاکٹر انعام الحق جاوید ایک ہمہ جہت ادبی شخصیت کے مالک ہیں۔ انہوں نے نظم و نثر کی کئی اصناف میں اپنی صلاحیتوں کے جوہر دکھائے ہیں۔ خصوصاً مزاحیہ شاعری میں ان کی خدمات انتہائی قابلِ تحسین ہیں۔ ڈاکٹر انعام الحق جاوید محقق اور نقاد بھی ہیں۔ مختلف انتظامی عہدوں پر انہوں نے کئی قومی اداروں میں انتہائی بصیرت و فراست سے اہم خدمات انجام دی ہیں۔ ڈاکٹر انعام الحق جاوید کی مزاحیہ شاعری معاشرے میں بکھرے ہوئے مسائل کا شگفتہ انداز میں اظہار کرتی ہے۔ ان کی شاعری میں مزاح اور شگفتگی انتہائی شائستہ انداز میں اجاگر ہوئی ہے۔ شاعری میں ہلکا پھلکا طنز کہیں ہے بھی تو کسی کی دل شکنی نہیں کرتے۔ ڈاکٹر انعام الحق جاوید کی نثر کا مطالعہ اُن کے عہد کے مطالعے کے مترادف ہے۔ ویسے تو کسی نہ کسی حد تک سبھی ادیبوں کے یہاں اپنے دور کی معاشرت اور سیاست کی جھلکیاں ملتی ہیں لیکن ڈاکٹر انعام الحق جاوید کے یہاں جو وسعت اور تنوع ہے اپنے عہد کے سیاسی و سماجی اور معاشرتی و معاشی حالات کا آئینہ دار ہے۔ ڈاکٹر انعام الحق جاوید کی تخلیقات کا بڑا مقصد قوم کو خودداری اور خود اعتماد ی کا پیغام دینا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی ادب کے معمار کے سلسلے کی کتابوں کا بنیادی مقصد ،جہاں ایک طرف پاکستانی زبانوں کے اہم لکھنے والوں کی خدمات کا اعتراف کرنا اور انھیں عام قارئین تک پہنچاناہے ، وہیں ادب کے محققین، ناقدین ، اور اردو ادب کے طالب علموں کوان کے متعلق بنیادی نوعیت کا تحقیقی و تنقیدی مواد فراہم کرنا بھی ہے۔یہی وجہ ہے کہ اس سلسلے کی تمام کتابوں کی نوعیت تعارفی ہونے کے ساتھ ساتھ ایک حد تک تحقیقی و تنقیدی بھی ہے۔ڈاکٹر انعام الحق جاوید،پر لکھی گئی یہ کتاب اس سلسلے کی141ویں کتاب ہے۔ انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر انعام الحق جاوید دنیا بھر میں مختلف مشاعروں میں پاکستان کی نمائندگی کر رہے ہیں۔ ان کی اردو اور پنجابی شاعری کو بہت شہرت ملی ہے۔ انہوں نے اردو اور پنجابی ادب کو طنزو مزاح کے گراں قدر شعری اظہار عطا کےے ہیں۔ انہوں نے اپنی شگفتہ تحریروں اور اپنی شاندار مزاحیہ شاعری کے ذرےعے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو اپنی سرزمین ِ وطن سے قریب رکھنے میں بھی ایک مستقل سفیر کا کام کیا ہے۔ ان کی کئی کتابیں شائع ہو چکی ہیں۔یہ کتاب 162صفحات پر مشتمل ہے، اس کی قیمت 200روپے ہے۔ ڈاکٹر انعام الحق جاوید کی شخصیت اور فن کے حوالے سے یہ کتاب اُن کے اسلوب اور تحقیق کے حوالے سے قارئین کے استفادے کا باعث بنے گی۔ کتاب مارکیٹ ، اکادمی کی بُک شاپ اور اکادمی کے ریجنل دفاتر میں دستیاب ہے۔

Comments are closed.