حمایت علی شاعر کے انتقال پر اکادمی ادبیات پاکستان کی تعزیت


اسلام آباد (پ ر) حمایت علی شاعرپاکستان کے اہم لکھنے والوں میں شمار ہوتے ہیں۔ ان کی کتب پاکستانی ادب کا گراں قدر سرمایہ ہیں۔ ان خیالات کا اظہاراکادمی ادبیات پاکستان کے چیئرمین سید جنید اخلاق نے حمایت علی شاعرکے انتقال پر اپنے تعزیتی پیغام میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ حمایت علی شاعر کے شعری مجموعے آگ میں پھول ، مٹی کا قرض ، تشنگی کا سفر اورہارون کی آواز،حرف حرف روشنی اہم شعری مجموعے ہیں۔ انھوں نے اپنی خود نوشت سوانح عمری مثنوی کی ہئیت میں تحریر کی جوآئینہ در آئینہ کے نام سے شائع ہوئی ہے۔ حمایت علی شاعر کی دو نثری کتابیں شیخ ایاز اور شخص و عکس بھی شائع ہو چکی ہیں۔ان کے دیگر ادبی کام بھی اہل علم کے لیے گراں قدرسرمایہ کی حیثیت رکھتے ہیں۔حمایت علی شاعرکو ان کی ادبی خدمات پر حکومت پاکستان نے صدارتی ایوارڈ سے نوازا جبکہ بہترین فلمی گیت لکھنے پرانہوں نے نگار ایوارڈ بھی حاصل کیا۔اس کے علاوہ انہیں رائٹرگلڈآدم جی ایوارڈ، عثمانیہ گولڈ میڈل (بہادر یار جنگ ادبی کلب) سے نوازا گیا۔ ان کے انتقال سے پاکستان ایک بڑے شاعر سے محروم ہو گیا ہے۔ چیئرمین ، اکادمی ادبیات پاکستان سید جنید اخلاق اور ڈائریکٹر جنرل، ڈاکٹر راشد حمید نے مرحوم کے لیے مغفرت اور لواحقین کے لیے صبر جمیل کی دعا کی۔

Comments are closed.