منعقدہ تقریب”اہل قلم سے ملیے“کے تحت پروفیسر ڈاکٹر مقصود جعفری کے ساتھ ملاقات

اسلام آباد (پ ر) شاعری احساس جمال کا نام ہے۔جس کا ضمیر نہیں وہ شاعر ہی نہیں۔ ان خیالات کا اظہارکشمیر سے تعلق رکھنے والے معروف شاعر، دانشور اور کالم نگار پروفیسر ڈاکٹر مقصود جعفری نے اکادمی ادبیات پاکستان کے زیر اہتمام منعقدہ تقریب ”اہل قلم سے ملےے“ میں کیا۔پروفیسر ڈاکٹر مقصود جعفری سے قریبی عزیز و اقارب اوراہل قلم نے ان کی فنی زندگی اور شخصیت کے حوالے سے گفتگو اور سوالات کےے۔ڈاکٹر راشد حمید، ڈائریکٹر جنرل اکادمی نے مہمانوں کا شکریہ ادا کیا۔پروفیسر ڈاکٹر مقصود جعفری نے کہا کہ 20ستمبر1947کو مقبوضہ کشمیر کے شہر پونچھ میں پیدا ہواچند دنوں کا ہی ہوں گا کہ والد تحسین جعفری نے پاکستان ہجرت کا فیصلہ کر لیا۔ میں نے مسلم ہائی سکول سید پورہ روڈ راولپنڈی سے میٹر ک کیا۔ گورڈن کالج راولپنڈی سے ایف اے کیا۔ بی اور اے اور ایم اے انگریزی بھی گورڈن کالج سے ہی کیا۔ انہوں نے کہا کہ شاعری کے بارے میں سمجھتا ہوں کہ ایک شاعری ہیجانی ہوتی ہے۔ ایک وجدانی ہوتی ہے جس شاعر ی کا سرچشمہ وجدان ہوتا ہے وہ بہت کم لوگو ں کو نصیب ہوتی ہے۔ چاہے وہ روایتی ہی ¿ت میں ہویا جدید شکل کی چیزوں میں ہو اس میں کشش ہوتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اصل میں غمِ کائنات ہویا غمِ جاں، جو لوگ اپنی ذات کے خول میں رہتے ہیں ان کی شاعری میں اپنی ذات کے محور کے ارد گرد گھومتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ میرے نزدیک بڑا شاعر اور بڑا انسان وہ ہے جومعاشرے کی غلاظتوں کو کم کرتا ہے۔شاعری احساس جمال کا نام ہے نہ کہ بدکرداری اور بدقماشی کا۔انہوں نے کہا کہ تمام مذاہب کی بنیاد انسانیت ہے۔ انسانیت سے بڑھ کر کوئی مذہب نہیں ڈاکٹر راشد حمید، ڈائریکٹر جنرل اکادمی نے کہا کہپروفیسر ڈاکٹر مقصود جعفری بین الاقوامی سطح پر جانے جاتے ہیںان کی اردو ،انگریزی اور کشمیری زبان میں تیس سے زائد کتب شائع ہو چکی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اکادمی ادبیات پاکستان کے پروگرام ” میٹ اے رائٹر “کے تحت آئندہ بھی ادبیوں اوردانشوروں کے ساتھ اس طر ح کی ملاقات کا اہتمام کرتی رہے گی۔جبار مرزا نے کہا کہ ڈاکٹر مقصود جعفری دیرینہ ساتھیوں میں سے ہیں۔انہوں نے کبھی کی کا رستہ نہیں روکا ہر ایک کی رہنمائی کی ہے۔ڈاکٹر فاطمہ حسن نے کہا کہ سچ بات اثر رکھتی ہے اور یہی بات سچے دانشور کی پہچان ہے۔ ڈاکٹر مقصود جعفری ہمہ جہت شخصیت ہیں اور ہفت زبان شاعر ہیں وہ بات کہنے کا سلیقہ رکھتے ہیں۔


ڈاکٹر فاطمہ حسن ، جبار مرزا،پروفیسر ڈاکٹر مقصود جعفری اور ڈاکٹر راشد حمید ، اکادمی ادبیات پاکستا ن کے پروگرام” اہل قلم سے ملیے“ میں سٹیج پر

Comments are closed.