اکادمی ادبیات پاکستان کی کتاب پیر فضل حسین گجراتی:شخصیت اورفن شائع ہو گئی

پیر فضل حُسین گجراتی پنجابی کے ممتاز شاعر تھے۔سید جنید اخلاق

اسلام آباد (پ۔ر) پیر فضل حُسین گجراتی پنجابی کے ممتاز شاعر تھے۔ پنجابی ادب کی مختلف اصناف میں ان کا وسیع ذخیرہ فکربہت وقیع اور استفادے کا باعث ہے۔ان کی پنجابی شاعری اپنے عہد کی عکاسی کرتے ہوئے تاریخی اہمیت رکھتی ہے۔یہ بات اکادمی ادبیات پاکستان کے چیئرمین سید جنید اخلاق نے پاکستانی ادب کے معمار کے سلسلے کی نئی کتاب”پیر فضل حسین گجراتی :شخصیت اورفن“ کی اشاعت کے موقع پر کہی۔انہوں نے کہا کہ پیر فضل حسین گجراتی کو جدید پنجابی غزل اور نظم کے بڑے شاعر کے طور پر انھیںبہت عزت ملی۔ پیر فضل حُسین گجراتی کی شخصیت اور فن کے حوالے سے اکادمی ادبیات پاکستان کی کتاب ایک اہم دستاویز ہے۔انہوں نے کہاکہ اکادمی ادبیات پاکستان کے اشاعتی منصوبے پاکستانی ادب کے معمار کے تحت شائع ہونے والی کتابیں پاکستانی ادب کے مشاہیر کی شخصیت اور ادبی خدمات کا تعارف پیش کرتی ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ کتاب افسانہ نگار،ناول نگار اور ڈرامہ نگارعرفان احمد عرفی نے تحریر کی ہے۔ عرفان احمد عرفی،پیر فضل حُسین گجراتی کے نواسے اور ادبی ورثے کے امین بھی ہیںجنہوں نے یہ کتاب انتہائی محنت اور لگن کے ساتھ تحریر کی۔ کتاب کی تدوین ادیب اور وفیات نگار ڈاکٹر منیر احمد سلیچ نے کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ سلسلے ”پاکستانی ادب کے معمار“ کی140 ویں کتاب ہے۔ امید ہے کہ اکادمی کی دیگر مطبوعات کی طرح یہ کتاب بھی محققین اور قارئین کو پسند آئے گی۔یہ کتاب180صفحات پر مشتمل ہے، اس کی قیمت 220روپے ہے۔ پیر فضل حسین گجراتی کی شخصےت اور فن کے حوالے سے یہ کتاب اہم حوالے کا درجہ رکھتی ہے۔ کتاب مارکیٹ ، اکادمی کی بُک شاپ اور اکادمی کے ریجنل دفاتر میں دستیاب ہے۔

PRESS RELEASE

Islamabad (P.R). Peer Fazal Hussain Gujraati was a distinctive poet of Punjabi language. His critical approach to different genres of Punjabi literature and his understanding of Punjabi literature was considerable which can be benefitted out. His Punjabi poetry is of great significance which marked its name in the history of Punjabi literature. These views were expressed by Syed Junaid Akhlaq, Chairman PAL on the publication the new book “Peer Fazal Hussain Gujraati: Shakhsiat aur Fun” of the series of “Makers of Pakistani Literature”.
This publication of Pakistan Academy of Letters (PAL) would be a significant document regarding the achievements and personality.
He stated that books produced under PAL’s research project “Makers of Pakistani Literature” presents an introduction literary services of recognized literary personalities of Pakistan. This book is written by Irfan Ahmed Urfi, novelist, playwright and short story writer. Irfan Ahmed Urfi is the grandson of Peer Fazal Hussain Gujraati as well as the custodian of his literary heritage who wrote this book with great zeal and enthusiasm. The book is compiled by Dr. Munir Ahmed Saleech. This is the 140th volume of “Makers of Pakistani Literature” which length is 180 pages and Rs. 220/-. This book is available in the market, PAL’s book shop and PAL’s regional offices.

Comments are closed.