کشمیر کی اسلامی تاریخ، ثقافت اور ورثہ بین الاقوامی کانگریس

اسلام آباد(پ۔ر) ڈاکٹرعارف علوی صدر اسلامی جمہویہ پاکستان4اپریل؍2019ء کو قومی تاریخ وادبی ورثہ ڈویژن ، اسلام آباد ، اوآئی سی ریسر چ سینٹر فاراسلامک ہسٹری آرٹ اینڈ کلچر(IRCICA)اور حکومت آزاد جموں وکشمیرکے باہمی اشتراک سے 4-5اپریل؍2019ء ، اسلام آبادمیں منعقد ہونے والی دوروزہ ’’کشمیر کی اسلامی تاریخ، ثقافت اور ورثہ بین الاقوامی کانگریس‘‘ کا افتتاح کریں گے۔کانگریس میں سردار مسعو خان صدر آزاد جموں و کشمیر بھی اظہار خیال کریں گے۔وفاقی وزیر تعلیم اور قومی تاریخ وادبی ورثہ ، شفقت محمودخطبہ استقبالیہ پیش کریں گے۔ ڈائریکٹر جنرل اوآئی سی ریسر چ سینٹر فاراسلامک ہسٹری آرٹ اینڈ کلچر(IRCICA)پروفیسر ڈاکٹر حالید ایرن اظہار خیال کریں گے۔ انجینئر عامر حسن سیکر ٹری قومی تاریخ وادبی ورثہ ڈویژن کانگریس کا تعارف پیش کریں گے۔ بین الاقوامی کانگریس کا افتتاحی اجلاس 04اپریل ؍2019ء بوقت 11:30بجے دن،سرینا ہوٹل اسلام آباد کے کہکشاں ہال میں منعقد ہوگا۔ کانگریس کا اختتامی اجلاس 05اپریل ؍2019ء سرینا ہوٹل اسلام آباد کہکشاں ہال میں منعقد ہوگا۔کانگریس میں ریسر چ سینٹر فاراسلامک ہسٹری آرٹ اینڈ کلچر کے ڈائریکٹر جنرل پروفیسرڈاکٹر حالید ایرن ،مشیر برائے سیکرٹری جنرل او آئی سی عزت مآب ایمبیسڈر احمد صریربھی خصوصی طورپر شرکت کریں گے۔ کانگریس میں بیرون ملک ترکی، بوسنیا ہرزگووینا، ایران اور بھارت کے مندوبین بھی شریک ہوں گے۔ او آئی سی کے رُکن ممالک میں سے 10ماہرین اور پاکستان بھر سے 20دانشورمقالات پیش کرینگے۔ اس کانگریس میں مقبوضہ کشمیر سے اہم3 دانشور اور ماہرین مقالات پیش کریں گے۔ کانگریس کا بنیادی مقصدکشمیر کی اسلامی تاریخ، اور ثقافتی ورثہ سے آگاہی ، دانشوروں سے استفادہ اور خطے کے اسلامی ورثہ کو عالمی و عوامی سطحوں پر اُجاگر کرنا ہے۔کانگریس کا جغرافیائی مرکزکشمیر کا وسیع خطہ ہوگا۔او آئی سی رُکن ممالک کے ماہرینِ ثقافتی ورثہ اور دانشوروں کی بصیرت اور علم سے استفادہ کرتے ہوئے کشمیر کی اسلامی تاریخ اور ثقافتی ورثہ کی ترویج کے لیے یہ کانگریس ممد ومعاون ثابت ہوگی۔پہلے دنبین الاقوامی کانگریس کے مختلف موضوعات پر اجلاس04اپریل ؍2019ء بوقت 3:00بجے دوپہرسے بوقت 6:00بجے شام اور دوسرے دن اجلاس 05اپریل 2019ء بوقت 9:00بجے صبح سے ء بوقت 11:00بجے صبح تک سرینا ہوٹل, اسلام آباد کے کہکشاں ہال میں منعقد ہوں گے۔اجلاس کے موضوعات ’’اسلام کا پھیلاؤ: تاریخی تناظر میں ‘‘،’’نمایا ں شخصیات اور اداروں کی ثقافتی خدمات ‘‘،کشمیر ی ثقافتی ورثہ کے حوالے سے اجلاس’’ یادگاریں، دستکاری :صورتحال، مطالعہ اور تحفظ‘‘ اور’’تحریری ثقافتی ورثہ : صورتحال ، مطالعہ اور تحفظ‘‘،’’کشمیر کی تاریخ ثقافت اور ورثہ پر تحقیق‘‘،’’کشمیر کے ثقافتی ورثہ کے تحفظ اور فروغ کے لیے تعلیم،میڈیا،ثقافتی سیاحت اور بین الاقوامی اشتراکی منصوبے کے حوالے سیتجاویز پالیسی اور سفارشات‘‘ شامل ہیں۔کانگریس میں ملک ،بیرون ملک اور آزاد جموں و کشمیر کے 200کے لگ بھگ دانشور، مندوبین،ماہرین اور شائقین شرکت کر رہے ہیں۔کانگریس کے اجلاسوں اور دانشوروں کے آراء کے روشنی میں کشمیر کی تاریخ وثقافتی ورثہ کے حوالے سے پالیسی بنانے میں معاونت ملے گی اور بین الاقوامی مخیر ادارے ، او آئی سی رُکن ممالک ، پرائیویٹ سیکٹر اور سول سوسائٹی کو متوجہ کرنے کے لیے مفید ثابت ہوگی۔

Comments are closed.