اکادمی ادبیات پاکستان کی خالدہ حسین کی یاد میں خصوصی تقریب

خالدہ حسین رجحان ساز افسانہ نگار تھیں ۔ڈاکٹر فاطمہ حسن
اسلام آباد (پ۔ ر) خالدہ حسین ایک رجحان ساز افسانہ نگار تھیں ۔ان خیالات کا اظہاراکادمی ادبیات پاکستان کے زیر اہتمام افسانہ نگار اور ناول نگارخالدہ حسین کی یاد میں منعقدہ خصوصی تقریب کی صدارت کرتے ہوئے ڈاکٹر فاطمہ حسن نے کیا۔محمد حمید شاہد،نیلوفر اقبال اور خالدہ حسین کی بیٹی یسرا نے اظہار خیال کیا۔نظامت محبوب ظفرنے کی۔تقریب میں خالدہ حسین کے ساتھ اکادمی کی تقریب ’’اہل قلم سے ملیے‘‘ کی ویڈیو بھی دیکھائی گئی۔فاطمہ حسن نے کہا کہ خالدہ حسین کی کہانیوں سے 70ء کی دہائیوں کی پوری ایک نسل متاثر ہوئی۔ اُنہوں نے افسانوں کو صحیح معنوں میں جدید عہد میں داخل کیا۔خالدہ حسن نے وجودی فکر کو اتنی گہرائی سے قبول کیا کہ اُن کی تخلیقات میں اسے بین السطور پڑھا جاسکتا ہے۔ ڈاکٹر فاطمہ حسننے کہا کہ خالدہ حسین اردو افسانے کا ایک اہم اور نمایاں نام ہے ۔ جدّت پسندوں میں خالدہ حسین وہ افسانہ نگارتھیں جو تخلیقی جواز کے ساتھ افسانے لکھتی رہیں اور پاکستانی سماج کی عکاسی کرتی رہیں۔ وہ اپنی تحریروں کے ذریعے ہمیشہ اپنے پڑھنے والوں کے دلوں میں زندہ رہیں گی۔ سید جنید اخلاق، چیئرمین اکادمی ادبیات پاکستان نے کہا کہ خالدہ حسین اردو فکشن میں ایک نمایاں لکھاری کے طور پر ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی۔ ان کے افسانے اور ناول انتہائی اعلیٰ معیار کے ہیں۔ اکادمی ادبیات پاکستان نے خالدہ حسین کی شخصیت اور فن کے حوالے سے ’’پاکستانی ادب کے معمار‘‘ سلسلے کی کتاب بھی شائع کی۔ اکادمی کے تقریباتی سلسلے ’’اہل قلم سے ملیے‘‘ میں بھی ایک پروگرام ان کے ساتھ منعقد کیا گیا۔ حمید شاہدنے کہا کہخالدہ حسین کی زندگی تحریک اور مزاحمت کے گرد ہے اُنہوں نے نظریات کے لیے نظریاتی لڑائی لڑی جو زیادہ تر وجود اور شناخت کے بارے میں تھی۔خالدہ حسین فیمینسٹ نہیں تھیں مگر اُنہوں نے اپنی تحریروں میں خواتین کے مسائل کو اُجاگر کیا۔خالدہ حسین ایک زمانے میں خالدہ اصغر کے نام سے لکھتی رہی اُنہوں نے فکش کی دنیا میں اپنا الگ اور نمایاں مقام بنایا۔ نیلوفر اقبال نے کہا کہ خالدہ حسین کے افسانوں کو سمجھنے کیلئے خالدہ کی سطح پر کچھ نہ کچھ آنا ضروری ہے۔خالدہ حسین کے افسانوں میں کوئی ابہام اور پیچیدگی نہیں ہے۔ اُنہوں نے سیدھی سادھی زبان استعمال کی اور گرفت میں آجانے والے موضوعات چُنے جن کا دائرہ بہت وسیع ہے۔ خالدہ حسین کی بیٹی یسرا نے کہا کہ انکی والدہ ایک بہادر، رحم دل اور پیار کر نے اولی خاتوں تھیں۔

Comments are closed.